Tum Dooriyoon Ki Baat Kerty Ho

Advertisements

Poet: Syed Ali Abbas Kazmi

تم دوریوں کی بات کرتے ہو
کیوں دل جلانے کی بات کرتے ہو

مجھے پاس ہی رہنے دو
اپنے ہو کر بیگانے سی بات کرتے ہو

تم کو معلوم میرا حال دل
آباد کر کے ویرانے کی بات کرتے ہو

بھلانا تجھے ہے ناممکن
کیوں روٹھ جانے کی بات کرتے ہو

خدارا میں ہوں ناتواں
کیوں ڈگمگانے کی بات کرتے ہو

شراب سا ہے نشہ تیرا
کیوں میخانے کی بات کرتے ہو

زر خرید غلام ہی سمجھ لو
کیوں چھوڑ جانے کی بات کرتے ہو

انا ہی رکھنی ہے تو پھر
کیوں شمع پروانے کی بات کرتے ہو

Advertisements