Junoon-e-ishq main haade inteha ko kya samjhu

Advertisements

جنونِ عشق میں حدِ انتہا کو کیا سمجھوں
جزا سمجھوں سزا سمجھوں تو ہی بتا کیا سمجھوں

وصل محبوب کو سکون قلب کی دوا سمجھوں
یا مل کے بچھڑنے کو درد دل کی ابتدا سمجھوں

کبھی غم ہجراں کے ابر گرتے ہیں خالی دامن میں
روٹھ جاۓ صنم تو عشق نا مراد کو کیا سمجھوں

کبھی ہر سانس لگے کم زندگی کے لیۓ
پھر انتہا چراغِ سحری گُل کو کیا سمجھوں

جنونِ عشق میں حد سے نکل جانے کو کیا سمجھوں
خطا اپنی سمجھوں یا رضا تیری سمجھوں

میں نا بلد عشق کی طُغیانی کو کیا سمجھوں
اے ربا ! تو ہی بتا میں کیا سمجھوں ؟

Advertisements